554

عقیدہ توحید کی اہمیت

مولانا ڈاکٹر محمد اشرف آصف جلالی
رب ذوالجلال کی وحدانیت پر یقین ہر دور کے سعادت مندوں کا شعار رہا ہے ۔ عقیدہ توحید ہر دور میں خوش نصیبوں کا طرہ امتیاز رہا ہے ۔عظمت توحید کا اعتراف ہر دور میں محور نجات رہا ہے اور ہر دور میں حق پرست یہی پیغام دیتے آئے ہیں کہ صرف اللہ ہی واجب الوجود ہے اور وہی مستحق عبادت ہے ۔ پہلی امتوں میں بھی یہی نور اعتقاد تھا اور اس امت میں بھی صفہ سے لیکر آج تک یہی معیار الوہیت مانا گیا ۔
انسان پر سب سے زیادہ احسانات خالق و مالک،رب ذوالجلال کے ہیں جس نے اسے پیدا کیا اور پرورش فرمائی انسان پر اللہ تعالیٰ کا سب سے بڑا حق یہ ہے کہ انسان اسے وحدہ لاشریک تسلیم کرے اسی لیے عقیدہ توحید تمام عقائد کی اساس اور تمام اعمال کا مدار ہے چنانچہ الہامی کتابوں میں بار بار اسی عقیدہ کا درس دیا گیا تمام ابنیاءکرام علی نبینا و علیہم والسلام کی دعوت کا موضوع اول یہ عقیدہ رہا سید المرسلین خاتم النبیین حضرت محمد مصطفیٰ نے اسی عقیدہ کی تبلیغ کے لیے طائف کے بازار میں پتھر بھی برداشت کیے سخت حالات کا مقابلہ کرتے ہوئے مسلسل آگے بڑھے اور اس جہان کو عقیدہ توحید کی عظمتوں سے مالا مال کیا آپ نے اپنی امت پر بھی لازم کیا کہ وہ اس نور کو آگے بانٹتی رہے یہ امت مسلمہ کا طرہ امتیاز ہے کہ اس نے اتنی صدیوں کا طویل سفر مکمل کر لیا ہے اور اب تک عقیدہ توحید کی امین ہے۔
لیکن مادہ پرستی اور ہوس زر کا ماحول اس عقیدہ کی چمک پر اثر انداز ہو رہا ہے نیز عقیدہ توحید اور عقیدہ رسالت کے باہمی ربط کے لحاظ سے کچھ شکوک وشبہات پیدا کیے جا رہے ہیں ایک طرف سے امت توحید کو صحیح ا لعقیدہ ہونے کے باوجودقدم قدم پر شرک کے بھیانک فتنوں کا سامنا ہے اور دوسری طرف کچھ جہال اور فریب خوردہ لوگ امت توحیدکو خرافات کی وادیوں میں دھکیلنے پرتلے ہوئے ہیں ۔اس حساس اور خطرناک موڑ پر عقیدہ توحید کی قرآن و سنت کی روشنی میں جامع تشریح کی از حد ضرورت ہے ۔یہ بات بالکل واضح ہے جس کا رب ذوالجلال کی وحدانیت پر کامل یقین ہو گا وہ عقیدہ رسالت کا اور آداب رسالت کا بھی محافظ ضرور ہو گا اور اس کے دل میں مقبولان بارگاہ ایزدی کا احترام بھی ضرور ہو گا ۔
عقیدہ توحید و رسالت کی پختگی میں ہی ہمارے تمام مسائل کا حل موجود ہے ۔پاکستان اپنی بنیاد اور بقا کے لحاظ سے دو قومی نظریے کا محتاج ہے ۔اور دو قومی نظریے کی بنیاد عقیدہ توحید پر ہے ۔عقیدہ توحید و رسالت کی روشنی ہی سے ہراندھیرے کا خاتمہ کیا جا سکتا ہے اور ہر سویرے کو آباد کیا جا سکتا ہے ۔
چنانچہ ادارہ صراط مستقیم پاکستان نے اہل حق کے پیغام کو اجاگر کرتے ہوئے 23 مارچ بروز ہفتہ بعد از نماز عشاءریلوے سٹیڈیم گڑھی شاہو لاہور میں پانچویں عقیدہ توحید سیمینار کا انعقاد کیا جا رہا ہے ۔جس میں حب الہی اور شوق معرفت کے زیر سایہ دنیا بھر کے کفار و مشرکین کو دعوت عقیدہ توحید پیش کی جائے گی ۔
امت توحید کی عقیدہ توحید کی حفاظت کے سلسلہ میں خدمات کو اجاگر کیا جائے گا، معیار الوہیت کو اجاگر کرتے ہوئے امت پر لگائے گئے فتوی شرک کا محاسبہ کیا جائے گا ۔ گستاخانہ کلچر کے خاتمہ اور جذبہ عشق رسول کو مزید فروغ دینے کی تدابیر پیش کی جائیں گی ، پاکستان کی فکری اساس دو قومی نظریہ کوعقیدہ توحید کی روشنی میں اجاگر کیا جائے گا، پاکستان کو دہشت گردی اور غیر ملکی مداخلت سے نجات دلانے کےلئے لائحہ عمل پیش کیا جائے گا۔
نغمہ توحید لب پہ ہر طرف چھاتے چلو
پھر صدائے یا نبی سے سینہ گرماتے چلو
بستی بستی سے چلو پھر قافلہ در قافلہ
غلبہ ءدین نبی کے علم لہراتے چلو

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں

This site uses Akismet to reduce spam. Learn how your comment data is processed.